احساس کمتری

ہم اس مملکت خداد کی بدقسمتی کہیں یا کیا مگر یہ ایک حقیقت ہے کہ جب سے یہ ملک قائم ہوا ہے اسکی بنیادیں جو بہت ہی مستحکم دو قومی نظریئہ پررکھی گئی تھیں انکو کھوکھلا کرنے کی تحریک اسکے وجود میں آنے کے دن سے جاری و ساری ہے، قطرہ قطرہ کرکے ہر جان لیوا زہر اس ملک کی بنیادوں میں ڈال کراس ملک کی عمارت کوڈھانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ کبھی ہم زبان کا شوشہ چھوڑتے ہیں تو کبھی فرقے کا الغرض دنیا کا شائد کوئی بھی ایسا سفلی عمل  جس سے پورے پورے ملک صفحہ ہستی سے مٹ جائیں اس پاکستان پر نا کئے گئے ہوں یہ ناممکن بات ہے۔ جب سے یہ ملک قائم ہوا جان بوجھ کراس قوم میں مختلف طریقوں سے احساس کمتری کا بیج بویا گیا زندگی کا کوئی ایسا شعبہ نہیں جس میں احساس کمتری کے سانپ کا ڈنک نا لگا ہو۔ چلیں اگر احساس کمتری پیدا کرنا ہی تھا تو کسی ترقی یافتہ قوم، یا مغرب سےموازنہ    کرتےہوئے پیدا  کرتے مگر جس ملک کو اعلیٰ و عرفیٰ ہونے کا  مقام دیا گیا وہ کوئی اور نہیں وہی ملک ہے جس سے علیحدگی  مذہب و قومیت کی بنیاد پر کی گئی تھی۔ جب تک تحریک پاکستان کے کارکن زندہ تھے تب تک پھر بھی تھوڑا اس ملک کے کرتاوں دھرتاوں کے دیدوں میں شرم کا پانی تھا مگربعد میں اس قوم  نے خود کو  ترقی کی دوڑمیں شامل ہونے کے نام پر پیسے کی چاہ نے شرم و حیا، تہذیب وتمدن، قومیت و مذہب سب کو پس پشت ڈالنے اور پیسے کو خدا ماننے والا بنا دیا ہے۔ کسی بھی قوم کو تباہ کرنا ہے تواسکی شناخت کوختم کردو اور یہ کام زبان، لباس،  لب و لہجہ وغیرہ سے شروع ہوتے ہوتے مذہب اور پھر قومی تشخص تک جاتا ہے اور پھرقوم برباد اور ملک کا نام ونشان مٹ جاتا ہے۔ ہمارے ملک میں بھی شروع دن سے انڈیا کے گھٹیا ترین معیار کو بھی بڑھا چڑھا کر بھی اعلی بنا کرپیش کیا جاتا ہے اور اس میں پیش پیش ہماری ہائی سوسائٹی کی وہ شخصیات و بیگمات  ہیں جنکوصرف اس موقع کی تلاش ہوتی ہے کہ کہاں انکا نام سامنے رہے اور کہاں انکے کانٹیکٹس بن سکیں اور انکو طاقت اور دولت  کا خزانہ ملے پھر اسکے بعد ملک کے دوسرے طبقے کیسے پیچھے رہ سکتے ہیں ۔۔۔ اسمگلنگ کے ذریعے سے انڈیا سے درآمد کی گئی بیوٹی پراڈکٹس نے تو نا صرف ملکی پراڈاکٹس کا بھٹا بیٹھا دیا ہے وہیں کافی حد تک معیشت کوبھی واسطہ بلاواسطہ نقصان دیا جارہا ہے مگر پیسے کے پجاری یہ کہاں سمجھتے ہیں۔ باقی نقصان کیبل پر بے دھڑک انڈین ڈرامے جنہوں نے تو وہ کام انجام دیا جو انڈیا اپنی فوج کے ذریعے انجام نہیں دے سکا، ہماری خواتیں جنہیں سب سے زیادہ احساس کمتری ہے انڈیا سے وہ ایسی متاثر ہوئیں انڈیاکے ڈراموں سے کہ آنے والی نسلیں بھگتان بھگتیں گی۔ پہلے جو بچے کلمہ پڑھکر سب سے شاباشی لیتے تھے اب وہ فلاں ڈرامے کا بھجن یا ہیرو کی نقل کرکے داد حاصل کرتے ہیں، پہلے بچیوں کے گھرمیں بھی ناچنے کو انتہائی برا سمجھا جاتا تھا اب تو سینکڑوں لوگوں کے سامنے ماں باپ خود اپنی بیٹیوں کوکہتے ہیں کہ بیٹا ذرافلاں گانے پرناچ کر دکھاو۔ اب تو خیر سے ہمارے ملک کی قومی زبان اردو جو پہلے ہی انگریزی کے ہاتھوں شرمندہ شرمندہ رہتی تھی اب تو گھر گھر بولی جانے والی ہندی کے ہاتھوں گھر سے نکال دی گئے کسی انسان کیطرح ہوگئی ہے۔ اب ہمارے بچے “خ” بولنے کہ بجائے “کھ”کہنے میں فخر محسوس کرتے ہیں اگر صیح کرنے کی غلطی کر بیٹھیں تو ایک طویل داستان شروع ہوجاتی ہے۔

جس طرح یہودیوں نے سب سے پہلے پورے مغرب میں آڑے ترچھے انسانی حقوق خاص طورپر حقوق نسواں کے نام پر عورت کوبازار کی زینت بناکر انکی معاشرت خراب کی ثقافت تباہ کی اسی ڈگرپرچلتے ہوئے انکی ہی تعلیمات پرعمل کرتے انڈیا اپنے دشمن پاکستان میں پہلے احساس کمتری، پھر ثقافت پر یلغار کرکے پاکستان کے معاشرے کی اقدارواخلاقیات، زبان اور آہستہ آہستہ مذہب پر وار کررہا ہے اور کامیاب بھی ہورہا ہے اور افسوس کا مقام یہ ہے کہ انڈیا کے ہاتھوں کھیلنےوالے کوئی اور نہیں اس ملک میں بسنے والے لوگ اور اقتدار کے ایوانوں کے مالک ہونے کا پرچہ اوپر سے لکھوا کرلانے والے رنگ برنگے بے شرم حکمران ہیں جنکو “ہمارا مذہب، زبان، ثقافت ایک ہے” ہونے کا دعوہٰ کرتے شرم نہیں آتی ہے۔

 

ایس-گل

Advertisements

About S.Gull

ایک عام انسان جو اس دنیا کے پل پل بدلتے رنگوںکو دیکھتا اور محسوس کرتا ہے جو معاشرے میں آہستہ آہستہ سرایت کرتے مادیت پرستی اورانسانیت کی تڑپتی سِسکتی موت کا تماش بہین ہے۔ جو اگرچہ کے خود بھی اس معاشرے کا ہی حصہ ہے مگرپھربھی چاہتا ہے کہ گھٹا ٹوپ اندھیرے میں تھوڑی سے روشنی مل جائے
This entry was posted in Uncategorized. Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s